Ticker

6/recent/ticker-posts

گلگت بلتستان کی تاریخ کا خلاصہ Summary of the history of Gilgit-Baltistan

گلگت بلتستان کی تاریخ کا خلاصہ Summary of the history of Gilgit-Baltistan
خلاصہ
شمالی پاکستان میں گلگت بلتستان (جی بی) کا علاقہ، جو پہلے پاکستان کے شمالی علاقہ جات کے نام سے جانا جاتا تھا، کی ایک طویل تاریخ ہے۔ اس علاقے کے لوگوں کو، جسے درد کے طور پر بیان کیا گیا ہے، کا ذکر کلاسیکی یونانی اور رومن مورخین اور مقدس ہندو متون میں کیا گیا ہے۔ اس خطے کی ابتدائی تاریخ (تیسری صدی عیسوی-دسویں صدی عیسوی) اس پر کشان، چینی اور تبتی سلطنتوں کی حکمرانی کے طور پر ظاہر کرتی ہے۔ 7ویں صدی کے چینی سیاحوں اور 8ویں اور 9ویں صدی کی عربی اور فارسی تواریخ میں اس خطے کو عربی میں پالولو یا بولور کا نام دیا گیا ہے۔ اس کا تذکرہ 10ویں صدی کے فارسی تواریخ ہدود الاعلام، 11ویں صدی کی کشمیری کلاسک راجترنگینی اور 16ویں صدی کے مرزا حیدر دگلت کی تاریخ رشدی میں بھی ملتا ہے، جو مغل شہنشاہ اکبر کے ایک تاریخ ساز ہے۔
خطے کی نوآبادیاتی تاریخ کا آغاز 19ویں صدی کے پہلے نصف میں جموں کے راجہ گلاب سنگھ کے ڈوگرہ جرنیلوں کے حملوں سے ہوا۔ یہ غیر ملکی حملوں اور مقامی بغاوتوں کی تاریخ ہے جو آج تک اس خطے کی قانونی، سیاسی اور آئینی حیثیت کو گھیرے ہوئے کنفیوژن کے مرکز میں ہے۔ جموں اور بعد میں کشمیر سے مقامی راجوں کے پے در پے حملے، پھر انگریزوں کے ساتھ ساتھ اس خطے کی پاکستان سے وابستگی کے نتیجے میں خودمختاری کے متعدد دعوے اور جوابی دعوے سامنے آئے ہیں۔ آج یہ خطہ کشمیر پر ہندوستان اور پاکستان کے درمیان ناقابل تلافی تنازعہ کی لپیٹ میں ہے۔ 19ویں صدی کے آخر میں ایک موقع پر، ریاست کشمیر، انگریزوں اور چینیوں نے بیک وقت ہنزہ کی چھوٹی ریاست پر اپنا دعویٰ کیا۔
1947 اور 1974 کے درمیان، پاکستانی حکومت نے جی بی کا اسی طرح انتظام کیا جیسا کہ انگریزوں نے کیا تھا، یعنی قومی پارلیمنٹ میں اس خطے کی سیاسی نمائندگی کے بغیر۔ تقسیم کے بعد سے جی بی کی تاریخ بنیادی طور پر پاکستانی ریاست کا مکمل رکن بننے کی جدوجہد کی تاریخ رہی ہے۔ درجہ بندی کی خودمختاری کے معاملے کے طور پر یہ تاریخ دلچسپ ہے۔ 1950 کی دہائی کے بعد سے کچھ ٹکڑوں میں کی گئی اصلاحات اور ان اصلاحات کا انتہائی سست عمل درآمد ہوا ہے۔ 1947 میں مقامی لوگوں کی یہ امید کہ وہ ملک کے دیگر خطوں کی طرح پاکستانی وفاق میں ایک صوبے کے طور پر شامل ہو جائیں گے، بنیادی طور پر غیر حقیقی ہے۔

Post a Comment

1 Comments