Ticker

6/recent/ticker-posts

جو تمہارا ل توڑ دےاسکا دل توڑ دو درد کو سہنا چھوڑ دو Break the heart of the one who breaks your heart, stop enduring the pain

جو تمہارا ل توڑ دےاسکا دل توڑ دو درد کو سہنا چھوڑ دو Break the heart of the one who breaks your heart, stop enduring the pain

دل کا صرف ایک دروازہ ہوتا ہے۔دل می صرف آنے کا راستہ ہوتا ہے جانے کا کوٸی راستہ نہیں ہوتا.اسلیے اس لیے جو بھی دل سے جاتا ہے وہ دل توڑ کر ہی جاتا ہے۔ہمیشہ یہ بات یاد رکھنا جو تمہارا ہوتا ہے وہ تمہارے پاس واپس آجاتا ہے اور جو تم چھنتے ہو وہ تم سے چھین لیا جاتا ہے۔

جو تمہارا ل توڑ دےاسکا دل توڑ دو درد کو سہنا چھوڑ دو Break the heart of the one who breaks your heart, stop enduring the pain

ہمارے کڑوے الفاظ لوگوں کو بہت جلدی چبھ جاتے ہیں لیکن ہمارا صاف دل کسی کو دکھاٸی نہیں دیتا۔چپ رہ کر سہتے رہو تو آپ بہت اچھے ہو اور اگر آپ بول پڑے تو آپ سے برا کوٸی نہیں۔مانا کہ کسی سے زیادہ ناراض نہیں رہنا چاہیے لیکن جب سامنے والے کو ہماری ضرورت ہی نہیں تو زبردستی کے رشتے رکھنے سے کوٸی مطلب ہی نہیں۔

جو تمہارا ل توڑ دےاسکا دل توڑ دو درد کو سہنا چھوڑ دو Break the heart of the one who breaks your heart, stop enduring the pain

ایک اچھے رشتے میں ایک دوسرے کو وقت دیا جاتا ہےجھوٹے وعدے نہیں۔س دن ہم یہ سمجھ جاٸینگے کہ سامنے والا غلاط نہیں بس اسکی سوچ ہم سے الگ ہے اس دن زندگی سے بہت سے دکھ ختم ہو جاٸیں گے۔کچھ لوگ اتنا اچھا سبق سیکھا جاتے ہیں کہ پھر زندگی میں کچھ اور سیکھنے کی چاہت ہی نہیں رہتی۔

جو تمہارا ل توڑ دےاسکا دل توڑ دو درد کو سہنا چھوڑ دو Break the heart of the one who breaks your heart, stop enduring the pain

پتہ نہیں یہ کیسی دنیا ہے یہاں برے لوگ کو موقع اور اچھے لوگوں کو دھوکہ ہی ملتا ہے۔یہ احساس بھی کتنا کڑوہ ہے کہ آپ کے کٸی دوست ہوں اور ان میں سے ایک بھی دوست نہ ہو۔ہمیہشہ یہبات یاد رکھنا بھیڑ میں سب لوگ اچھے نہیں ہوتے اور اچھے لوگوں کی کبھی بھیڑ نہیں ہوتی۔ جو کھو گیا اس کے لیے رویا نہیں کرتے جو پالیا اس کو کھویا نہیں کرتے۔

ان کے ہی ستارے چمکتے یں اس دنیا میں جو مجبوریوں کا رونا رویا نہیں کرتے۔کچھ تقدیر ہار گٸی کچھ سپنے ٹوٹ گٸے۔کچھ غیروں نے بربادکیا کچھ اپنے  روٹھ گٸے۔کیسے گذر رہی ہیں یہ سب پوچھتے ہیں کیسے گذارتے ہو یہ کوٸی نہیں پوچھتا۔

ساری عمر کوٸی جینے کی وجہ نہیں پوچھتا لیکن مرنے والے دن سب پوچھتا ہے کیسے مرا۔کسی کو اپنا اتنا بھی وقت نہ دو کہ وہ وقت آنے پر آپ کی اہمیت ہی بھول جاۓ۔جھوٹ کہتے ہیں لوگ کہ ہم سب مٹی سے بنتے ہیں۔میں کٸی اپنوں سے واقف ہوں جو پتھر سے بنے ہیں۔درد کی بھی ایک اپنی ادا ہے یہ سہنے والوں پہ فدا ہے۔

Post a Comment

0 Comments